لاہور: سینیٹ الیکشن میں مسلم لیگ (ن) کی واضح اکثریت روکنے کیلئے اپوزیشن نے خفیہ پلان بنا لیا۔مسلم لیگ (ن) کو پنجاب سے سینٹ کی 12 نشستوں کی بجائے 9 نشستوں تک محدود کرنے کے لیے پی ٹی آئی، مسلم لیگ ق اور پیپلز پارٹی نے ہاتھ ملا لیے۔تفصیلات کے مطابق سینیٹ الیکشن میں مسلم لیگ (ن) کی واضح اکثریت روکنے کیلئے اپوزیشن نے خفیہ پلان بنا لیا۔
پی ٹی آئی، پیپلز پارٹی، (ق) لیگ کے درمیان بیک ڈور ڈپلومیسی کا آغاز ہوگیا ہے۔پنجاب اسمبلی کی خالی ہونے والی سینٹ کی 12 نشستوں میں سے 7 جنرل نشستوں میں سے ایک، ٹیکنوکریٹ، علماء کی دو نشستوں میں سے ایک اور اقلیتوں کی ایک نشست باہم بانٹنے کیلئے بات چیت فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہوگئی ہے۔پی ٹی آئی جنرل نشستوں پر سابق گورنر پنجاب چودھری محمد سرور کو لانے کی خواہاں ہے جبکہ ٹیکنوکریٹ کی نشست پر (ق) لیگ کے کامل علی آغا اور پیپلز پارٹی کے چودھری اعتزاز احسن مشترکہ امیدوار بننے کے خواہاں ہیں۔
ان دونوں میں سے کسی ایک کی قربانی دینی پڑیگی اور جو جماعت قربانی دیگی اسکے نان مسلم امیدوار کو منیارٹی کی نشست پر انکے نامزد کردہ امیدوار کو سینٹ میں اپوزیشن کا مشترکہ امیدوار بنا لیا جائیگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں