لاہور:پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ انتظار قتل کیس کا مقدمہ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں چلایا جائے ۔تفصیلات کے مطابق عمران خان کا اپنی پریس کانفرنس میں کہنا تھا کہ انتظار کے والد جے آئی ٹی سے بالکل بھی مطمئن نہیں ہیں کیونکہ پنجاب حکومت کا سندھ اور پنجاب پولیس سے اعتماد بالکل اٹھ چکا ہے یہ لوگوں کو انصاف فراہم کرنے میں نا کام ہو چکے ہیں کیونکہ پولیس میں سیاسی بنیادوں پر بھرتیاں کی گئی ہیں جبکہ کے پی کے میں کوئی بھی سیاسی بنیادوں پر بھرتی نہیں کی گئی ۔
مقتول ا نتظار کے والد اشتیاق احمد نے کہا کہ میرے بیٹے کا قتل مکمل منصوبہ بندی کے تحت کیا گیا۔مجھے جے آئی ٹی کی تحقیقات پر تحفظات ہیں، لہٰذا انصاف کے لیے انتظار کا کیس انسداد دہشت گردی عدالت میں چلایا جائے۔ اور انہیں نے پہلے بھی اس معاملے کو سی ٹی ڈی کے حوالے کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ یا د رہے کہ ڈیفنس کے علاقے خیابان اتحاد میں ہفتہ 13 جنوری 2018 کی شب کو اے سی ایل سی اہلکاروں کی جانب سے ایک گاڑی کو رکنے کا اشارہ کیا گیا تھا جس کے نہ رکنے پر اہلکاروں نے فائرنگ کی تھی جس سے 19 سالہ نوجوان انتظار احمد جاں بحق ہوگیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں