کراچی: کراچی میں نقیب اللہ محسود قتل کیس کے الزام میں معطل ایس ایس پی راؤ انوار نے کہا ہے کہ جب کوئی غلط کام کیا ہی نہیں توگرفتاری کیوں دوں؟ جے آئی ٹی بنائی جائے اس کے سامنے پیش ہوں گا۔ انہوں نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی سندھ اور اہم اجلاسوں میں کہا گیا کہ جودہشتگرد ہے وہ زمین پرنہیں ہوناچاہیے۔
اگر میں نے سازش کی ہے تو پھر یہ سب بھی سازش میں آتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں اعلیٰ پولیس افسران کے احکامات پرعمل کیا ہے اعلیٰ پولیس افسران بھی مقدمے کی دفعہ 109 میں آئیں گے۔ راؤ انوار نے کہا کہ جے آئی ٹی بنائی جائے اس کے سامنے پیش ہوں گا۔ انہوں نے کہا کہ جب کوئی غلط کام کیا ہی نہیں توگرفتاری کیوں دوں ؟ گرفتاری تب دوں گا جب کوئی غلط کام کیا ہوگا۔ مجھ سے اگرطریقے سے بات کرتے تومیں خود ساتھ دیتا۔ انہوں نے کہا کہ پولیس والے کے گھروں میں چھاپے مارے جارہے ہیں یہ زیادتی ہے۔اگریہ سلسلہ نہ رکاتوڈکیتی کامقدمہ درج کرواؤں گا

اپنا تبصرہ بھیجیں