لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کے استعفیٰ سے دستبردار نہیں ہونگے، حکومت نے دھرنے کے شرکا کا کھانا پینا بند کر دیا ہے ، پتے اور کھجوریں کھا لیں گے مگر موقف سے دستبردار نہیں ہونگے، علامہ خادم رضوی نے موقف سے دستبردار نہ ہونے کا اعلان کر دیا۔تفصیلات کے مطابق عدالتی احکامات پر راولپنڈی اور اسلام آباد کی انتظامیہ تحریک لبیک یا رسول اللہ کے فیض آباد دھرنے کے شرکا کے خلاف حرکت میں آگئی ہے اور دھرنے کے شرکا کی سہولیات بند کرنے کیلئے پولیس نے کارروائیاں شروع کر دی ہیں ۔ راولپنڈی کے تھانہ نیو ٹائون پولیس نے چاول کی دیگوں اور دال روٹی کے پیکٹس پر مشتمل 6گاڑیوں کو پکڑ کر تحویل میں لے لیا ہے جبکہ صادق آباد پولیس نے بھی خوراک سے بھری 3گاڑیاں تحویل میں لے لی ہیں۔ دوسری جانب فیض آباد کے قریبی علاقوں کو مکمل طور پر سیل کر دیا گیا ہے اور دھرنے میں شرکت کیلئے آنیوالے 30افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ تحریک لبیک یا رسول اللہ کے امیر علامہ خادم رضوی نے پولیس کارروائی اور انتظامیہ کی جانب سے دھرنے کے شرکا کی سہولیات بند کرنے کیلئے کارروائیوں پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے دھرنے کے شرکا کا کھانا پینا بند کر دیا ہے ، ہم پتوں اور کھجوروں پر گزارا کر لیں گے مگر اپنے موقف سے دستبردار نہیں ہونگے ۔ زاہد حامد کے استعفیٰ سے کم کوئی بات قبول نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں