ہری پور: ملزمان کی پشت پناہی کرنے پر ڈی آئی جی نے ایس ایچ او خالد الرحمان کو معطل کر کے لائن حاضر کر دیا ایس ایچ او خالد خان پانچویں بار معطل سوتیلی بیٹی سے نکاح پولیس کی جانب سے ملزم کو گرفتار نہ کرنے پر ڈی آئی جی نے ایس ایچ او کو معطل کر دیا نکاح خواں کا لائنس بحال بیٹی کی والدہ شہر بانو نے ڈی آئی جی کو درخواست میں موقف اختیار کیا تھاکہ میری پہلی شادی عابد شاہ سے ہوئی تھی جس سے میرے چار بچے ہیں ان میں بیٹء سمیرا،بیٹا فہد۔
بیٹی ملائکہ اور ایک بیٹا علی ہیں عابد شاہ کی وفات کے بعد13/7/17 کو میری دوسری شادی ہری پور راجہ آباد کے رہائشی وارث علی شاہ ولد واجد علی شاہ سکنہ پنڈ کمال خان حال محلہ راجہ آباد سے ہوئی میں چاروں بچوں کے ساتھ اپنے دوسرے شوہر وراث علی شاہ کے ساتھ رہنے لگی شادی کے دو ماہ بعد ہی میری بیٹی سمیرا کو اپنے جال میں پھنسایا اور 5/9/17کو لے کر اچانک غائب ہوگیا جسکی اطلاع میں نے تھانہ سرائے صالح کو دی پولیس کی جانب سے میرے ساتھ کوئی تعاون نہ کیا گیا مجھے میرے نمبر پر میرے شوہر کی جانب واٹس ایپ ملا جسمیں نکاہ نامہ کا فوٹو بھیجا گیا جو کہ میں لے کر تھانے گئی اور 28/10/17 کو ایف آئی آر نمبر 019 علت نمبر 494 کاٹی گئی لیکن ایس ایچ او کی جانب سے کسی قسم کی کوئی کاروائی نہ کی گئی ایف آئی آر میں مدعیہ نے دو گواہان جن میں نثار احمد۔
عمران علی کو۔۔نکاہ رجسٹرار علی احسان کو اور اپنے سسر واجد علی شاہ اپنی ساس مسمائنسیم بی بی کو بھی نامزد کیا عدلتی حکم پر انکے خلاف 493/A/34 ی ایف آئی آر کی گئی ایس ایچ او کی جانب سے جانبداری ملزمان کو مکل سپورٹ کر رہا ہے جان بوجھ کر ملزمان کو گرفتار کرنے کی بجائے ان کو قانونی معاونت بھی فراہم کر رہا ہے انصاف نہیں ملا رہا مدعیہ سیدہ شہر بانو دو دن قبل ڈی آئی جی سعید خان وزیر اور ڈی پی او ہری پور کوپولیس کی جانب سے عدم تعاون جانبداری کی درخواست پر ڈی آئی جی کے خصوصی احکامات پر ڈی پی او ہری پور نے ایس ایچ او تھانہ سرائع صالح خالد رحمان کو لائن حاضر کر دیا واصح رہے کہ تھانہ سرائع صالح کے ایس ایچ او خالد رحمان پانچویں بار معطل ہو رہے ہیں پہلے غازی سے معطل کرکے سزا کے طور تورغر بھیجا گیا ایک ماہ قبل ہی ہری پور دبارہ تعینات کیا گیا تھا جبکہ خاتون نے پری پور پریس کلب میں پریس کانفرس کے دوران کہا ہے کہ میرے ساتھ انصاف نہیں ہو ہا پولیس جان بوجھ کر ملزمان کی پشت پناہی کرتی ہے صوبہ میں کوئی تبدیلی نہیں ہے عوام کو دھوکہ دیا جا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں