اسلام آباد(این این آئی)امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے کہا ہے کہ بھارت پر پاکستان سے تعلقات میں بہتری لانے کے لیے دباؤ ڈالا ہے۔پاکستان اور امریکہ کے درمیان ٹریک ٹو مذاکرات کے چوتھے دور میں اظہار خیال کرتے ہوئے پاکستان میں متعین امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے کہا کہ پاکستانی قیادت نے افغانستان میں قیام امن کیلئےکوششیں تیز کرنے کا یقین دلایا ہے ٗ ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان دہشتگردوں کے خلاف فیصلہ کن کارروائی کرے، ٹرمپ انتظامیہ نے بھارت سے افغانستان میں اقتصادی سطح پر ڈو مور کا مطالبہ کرتے ہوئے اس پر زور دیا ہے کہ پاکستان کےساتھ تعلقات کو بہتر بنایا جائے۔امریکی سفیر نے کہا کہ ہمیں طالبان پر اس وقت تک دباؤ جاری رکھنا ہے جب تک وہ مذاکرات کی میز پر نہیں آجاتے اور خواتین کا احترام و اقلیتوں کو تحفظ فراہم نہیں کرتے ۔انہوںنے کہاکہ ٹرمپ حکومت تمام مسلح گروہوں کے ساتھ ایک ہی طریقے سے نمٹے گی۔ڈیوڈ ہیل نے خطے میں امریکی پالیسیز کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کی نئی حکمت عملی علاقائی بنیادوں پر ہے جس کا مقصد دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا خاتمہ اور اقتصادی خوشحالی میں اضافہ کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی قیادت نے افغانستان میں قیام امن کے لیے اپنی کوششیں تیزکرنے کا یقین دلایا۔ امریکہ نے بھارت پرافغانستان میں اقتصادی سطح پر ڈومور کرنے کا مطالبہ کیا، ہم مل کر اس تعاون کو مزید فروغ دے سکتے ہیں۔ڈیوڈ ہیل نے کہا کہ امریکہ کی نئی حکمت عملی علاقائی بنیادوں پر ہے، نئی حکمت عملی کا مقصد دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کا خاتمہ اور اقتصادی خوشحالی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں