کراچی :کراچی اسمبلی کے اجلاس میں ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا رکن صوبائی اسمبلی نصرت سحر عباسی کو بیٹا اور نصرت سحرعباسی،ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی کو امی کہہ کر پکارتی رہیں ،دونوں کے مابین ہونے والے مکالمے سے ایوان قہقہوں سے گونجتا رہا ۔تفصیلات کے مطابق کراچی میں سندھ اسمبلی کے اجلاس کا آغاز ہی شور شرابے سے ہوا۔
اجلاس کا اآغاز ہوتے ہی اپوزیشن نے ہنگامہ آرائی اور احتجاج شروع کر دیا ۔چھٹی کے بعد اپوزیشن کی بات سننے کی شہلارضا کی یقین دہانی پراپوزیشن ارکان نےاحتجاج ختم کردیا۔اس دوران ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا رکن صوبائی اسمبلی نصرت سحر عباسی دلچسپ مکالمہ ہوا ۔ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا رکن صوبائی اسمبلی نصرت سحر عباسی کو بیٹا اور نصرت سحرعباسی،ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی کو امی کہہ کر پکارتی رہیں۔مائیک بند ہونے پر نصرت سحر عباسی کا کہنا تھا کہ امی میرا مائیک تو کھلوا دیں جس پر ڈپٹی سپیکر سندھ اسمبلی شہلا رضا نے کہا کہ بیٹا آپ تمیز سے بات کریں ورنہ اسمبلی سے نکلوا دوں گی ۔اس دلچسپ مکالمے کے دوران ایوان قہقہوں سے گونجتا رہا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں