کراچی (ویب ڈیسک) خراب موسم اور ویسٹ انڈین کھلاڑیوں کی بنگلہ دیش پریمیئر لیگ میں مصروفیت کے سبب ویسٹ انڈیز کا دورہ پاکستان ملتوی کردیا گیا ہے۔ لاہور گذشتہ ایک ہفتے سے اسموگ کی لپیٹ میں ہے۔ دھند نے کالی آندھی کی آمد ناممکن بنادی۔ موسم کی بدلتی ہوئی صورتحال نے لاہور میں تین میچوں کے انعقاد کو مشکل بنادیا ہے۔ پی سی بی نے غیر ملکی کوچنگ اسٹاف کو لاہور میں اسٹینڈ بائی رکھا ہوا تھا لیکن پیر کیشب دورہ ملتوی کردیا گیا۔ ذرائع کے مطابق پی سی بی اور ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے نومبر میں دورے پر اتفاق کیا تھا لیکن اسموگ اور دیگر وجوہات کے سبب دونوں بورڈ سیریز کیلئے معاملات کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے کوشاں تھے تاہم پاکستان سپر لیگ کے تیسرے ایڈیشن تک سیریز کا انعقاد ممکن نہ تھا جس کا اختتام مارچ 2018 میں ہو گا۔ ویسٹ انڈین نومبر کے آخر میں بھی آسکتی تھی لیکن پی سی بی اس طرح کا خطرہ مول نہیں لینا چاہتا تھا کیونکہ اسموگ کی وجہ سے ان کنڈیشنز میں آئی سی سی میچ ریفری میچز کے انعقاد کی اجازت نہیں دیتے اور محکمہ موسمیات نے بھی واضح نہیں کیا کہ آخر اسموگ کب تک جاری رہے گی لہٰذا باہمی مشاورت اور رضامندی سے فیصلہ کیا گیا کہ فی الحال سیریز کو ملتوی کردیا جائے اور اسے آئندہ سال قبل از وقت منعقد کرانے کی کوشش کی جائے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے ایک اعلی افسر کا کہنا ہے کہ ویسٹ انڈین بورڈ پاکستانی سیکیورٹی کی صورتحال کے سلسلے میں آئی سی سی اور اپنی پلیئرز ایسوسی ایشن کے ساتھ رابطے میں ہے۔ پی سی بی کو بتایا گیا ہے کہ ویسٹ انڈین ٹیم نومبر کے آخری ہفتے میں لاہور آئے گی۔ تاہم اس بارے میں تصدیق ہونا ابھی باقی ہے۔ اتوار کو نجم سیٹھی نے میڈیا کو بتایا تھاکہ ویسٹ انڈین بورڈ سے سیریز کے سارے معاملات طے پاچکے ہیں صرف تاریخوں کو طے کیا جارہا ہے۔ جلد سیریز کے لئے تاریخوں کا اعلان کردیا جائے گا۔ اس بارے میں ابہام کو ختم کرکے میڈیا کو جلد بتائیں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اس وقت لاہور کا موسم سیریز کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے ۔ پنجاب بھر میں شدید اسموگ نے پاکستان کرکٹ بورڈ کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیا تھا۔ ویسٹ انڈین ٹیم کے سخت شیڈولاور رواں ماہ دورہ نیوزی لینڈ کے سبب پاکستان آمد پر پہلے ہی سوالیہ نشان لگا ہوا تھا لیکن حال ہی میں پنجاب بھر میں شدید اسموگ کے سبب پی سی بی کیلئے ویسٹ انڈین ٹیم کی آمد کی صورت میں میچز کا انعقاد بھی ممکن ہوتا نظر نہیں آ رہا۔ ویسٹ انڈیز نے نیوزی لینڈ کے دورے کے لئے اپنی ٹیم کا اعلان کردیا ہے۔جس کی قیادت جیسن ہولڈر کریں گے۔ تاہم ویسٹ انڈین بورڈ الگ ٹی 20 ٹیم پاکستان بھیجنے پر رضامند تھا لیکن سیریز ملتوی کردی گئی، اب ویسٹ انڈین بورڈ چاہتا ہے کہ پاکستانی ٹیم بھی 2018 میں ویسٹ انڈیز کا دورہ کرے یا پھر پاکستان کرکٹ بورڈ اپنے ملک میں ہونے والی مجوزہ سیریز کا منافع برابری کی بنیاد پر تقسیم کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں