کراچی : قبضہ مافیہ کے گروپ سے تنگ آ کر بلقیس ایدھی نے ایدھی کی ایمبولینس سروسز بند کرنے کی دھمکی دے دی ۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر سوشل میڈیا صارفین نے بلقیس ایدھی اور فیصل ایدھی کی حمایت کا اعلان بھی کیا۔ بروز بدھ بلقیس ایدھی اور فیصل ایدھی نے ایک مشترکہ کانفرنس کی جس میں انہوں نے بتایا کہ قبضہ مافیہ زبردستی ایدھی سینٹرز کی زمینوں پر قبضہ کر رہے ہیں ۔
انہوں نے صوبائی حکومت سے مدد کی اپیل کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ لینڈ مافیہ کے خلاف ایکشن لیا جائے۔ بلقیس ایدھی نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ ایدھی سینٹرز کے ساتھ ایسا سلوک سندھ سمیت پاکستان کے مختلف علاقوں میں بھی ہو رہا ہے۔ حال ہی میں ایدھی سینٹر کے پُرانے سینٹرز میں شمار ہونے والے ٹھٹھہ سینٹر کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ یہ سینٹر 1985 میں بنایا گیا تھا جس پر لینڈ مافیا نے قبضہ کر لیا ہے۔
لینڈ مافیا نے قانونی طور پر حاصل کی جانے والی ایدھی سینٹرز کی زمین کو خالی کرنے اور وہاں کام کرنے والے ملازمین کو حملوں کی دھمکیاں بھی دیں۔ بلقیس ایدھی نے سندھ اور بلوچستان حکومت سے ہوشیار رہنے کی اپیل کی اور کہاکہ اگر کوئی کارروائی نہ کی گئی تو ایدھی کی ساری محنت بے کار ہو جائے گی۔ پریس کانفرنس میں بلقیس ایدھی نے کہا کہ اگر یہ معاملہ حل نہ کیا گیا تو ایدھی ایمبولینس سروس بند کر دی جائے گی۔
یہ معاملہ سوشل میڈیا پر آتے ہی سوشل میڈیا صارفین نے صوبائی حکومتوں ، مقامی رہنماؤں اور سیاسی جماعتوں کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور ایدھی کی میراث کو بچانے کے لیے فیصل ایدھی اور بلقیس ایدھی کی حمایت کا بھی اعلان کیا۔ سوشل میڈیا صارفین نے اس تمام تر معاملے پر میڈیا کے کردار کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں