اسلام آباد (این این آئی) تحریک انصاف کے سینئر رہنما نعیم الحق نے کہا ہے کہ خورشید شاہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے بحیثیت چیئرمین مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کی کرپشن پر آنکھیں بند رکھی ہیں اور ان کا ماضی داغدار ہے اس لئے تحریک انصاف نہیں سمجھتی کہ خورشید شاہ ملکی مفاد میں بہتر فیصلے کرسکتا ہے ، ان خیالات کا اظہار پی ٹی آئی کے سینئر رہنما نے خورشید شاہ کے دیئے گئے بیان کے ردعمل میں کیا۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی میں آصف زرداری کی بادشاہت قائم ہے اور خورشید شاہ اس بادشاہ کے ادنیٰ غلام ہیں بادشاہ سلامت جو احکامات جاری کرتے ہیں خورشید شاہ اسی پر عمل کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ خورشید شاہ پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیئرمین ہیں لیکن انہوں نے مسلم لیگ (ن) اور اپنی پارٹی کی کرپشن پر آنکھیں بند کررکھی ہیں حالانکہ خورشید شاہ کا بحیثیت چیئرمین پبلک اکاؤنٹس کمیٹی فرض تھا کہ کرپشن کی تحقیقات کرتے اسی لئے ہمارا پیپلز پارٹی سے اعتماد اٹھ چکا ہے اور پی ٹی آئی نہیں سمجھتی کہ یہ لوگ پاکستان کے مفاد میں صحیح فیصلے کرسکتے ہیں اس کے علاوہ ان کا ماضی بھی داغدار ہے اس لئے ہم نے قدم اٹھایا اور اپوزیشن لیڈر تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے .ایک سوال کے جواب میں نعیم الحق نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر تبدیل کرنے کیلئے دوسری پارٹیوں سے بھی بات چیت کررہے ہیں جلد حتمی نتیجے تک پہنچ جائینگے اپوزیشن لیڈر عمران خان یا شاہ محمود قریشی کو لانے کے سوال پر نعیم الحق نے بتایا کہ پارلیمانی کمیٹی نے عمران خان کومتفقہ طورپر اپوزیشن لیڈر لانے کا فیصلہ کیا تھا لیکن عمران خان پارٹی کے چیئرمین ہیں جو بھی فیصلہ کرینگے پوری پارٹی کو تسلیم کرنا ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں