بیجنگ(آئی این پی) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے بھارت کو ڈرونز کی فرخت کی منظوری دے دی گئی ہے ،بھارت چین اور پاکستان پر کڑی نگرانی کے لئے امریکہ سے اعلیٰ ہائی ٹیک ڈروں خرید رہا ہے،بھارت 22ڈرونز پر 2.2ارب پونڈ خرچ کرے گا،بھارت ان ڈرونز کو سرحدی حملوں کے لئے تعینات کر سکتا ہے۔ برطانوی میڈیا رپورٹس کے مطابق امریکہ اور بھارت مابین ڈرونز کی خریداری کو حتمی شکل دے دی گئی ہےامریکی صدر ڈونلٖڈ ٹرمپ کی جانب سے بھارت کو ڈرونز مہیا کرنے کی منظوری دی جا چکی ہے تاہم ٹرانزیکشن معاہدے پر دستخط نہیں ہوئے ہیں۔ رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ یہ ڈرونز بھارت چین اور پاکستان کی کڑی نگرانی کے لئے استعمال کا ارادہ رکھتا ہے۔ معاہدے کے تحت بھارت 22ڈرونز کی خریداری کرے گا جس پر 2.2ارب پاؤنڈ خرچ کئے جائیں گے۔ ہندوستانی اوقیانوس کے عسکریت پسندی کے بارے میں خدشات ہیں۔بھارت اور امریکہ کے درمیان دفاعی تعلقات پچھلی دہائی میں تیز رفتار سے بڑھے ہیں۔نئی دہلی اپنے روایتی سپلائر روس سے سے دوری اختیار کر رہی ہے۔ بھارتی فوجی ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکی ہتھیاروں کی منتقلی بھارتی صلاحیتوں میں اضافہ کرنا ہے۔ بھارت ان ڈرونز کو سرحدی حملوں کے لئے تعینات کر سکتا ہے۔جیسے عسکریت پسند کیمپوں کوہدف بنانا بھارت کا کہنا ہے کہ متنازعہ کشمیر کے پاکستان کی جانب دہشت گردی کے کیمپ موجود ہہیں۔ امریکی سیکرٹری دفاع جم میٹیس نے منگل کو بھارتی رہنماؤں سے بات چیت کی ہے جہاں انہوں نے عسکریت پسندوں کی پناہ گزینوں کو مشترکہ طور پر بند کر نے کا عندیہ دیا ہے اور افغانستان کو مستحکم کرنے میں مدد کے لئے بھارت سے زیادہ شراکتکی درخواست کی ہے۔ ایسا لگتا ہے جیسے ٹرمپ پاکستان پر دباؤ بڑھا کر ڈومور مطالبے کو منظوری دلوانا چاہتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں