اسلام آباد: وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری نے کہا ہے کہ شریف فیملی کے ہر کیس میں عجلت سے کام لیا گیا اور نوازشریف کو سزا دینے، نااہل کرنے اور سیاست سے ہٹانے کی بہت جلدی لگتی ہے۔ جمعرات کو سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری نے کہا کہ عمران خان کو جتنے مواقع ملے اتنے جھوٹ بولے، ہم قوم کو دکھانا چاہتے ہیں نیک شخص کی اصلیت کیا ہے، اس نیک شخص کی جیب سے منی لانڈرنگ نکلی ہے، عمران کہتے ہیں ساری غلطیاں معصوم ہیں اور ساری معاف کردی جائیں لیکن ہم اب ان کی اصلیت سامنے لانا چاہتے ہیں۔
طلال چوہدری نے کہا کہ ہمارے خلاف 24،24 گھنٹوں میں دستاویزات لندن سے منگوائی گئی اور تصدیق کرائی گئی، جلدی میں دیئے گئے فیصلوں پر سوال اٹھتے ہیں، شریف فیملی کے ہر کیس میں عجلت سے کام لیا گیا، نوازشریف کو نااہل کرنے، سزا دینے اور سیاست سے ہٹانے کی بہت جلدی لگتی ہے۔انہوں نے کہا کہ نیب کی عدالت میں فرد جرم کیلئے سات دن ہر ایک کو ملتے ہیں، پیپلزپارٹی کے کئی کیسز میں 6،6 مہینے فرد جرم نہیں لگی تاہم اسحاق ڈار پر 48 گھنٹوں میں ہی فرد جرم لگادی گئی۔
طلال چوہدری نے کہاکہ ان تمام چیزوں کے باوجود ہم عدالتوں کا سامنا کررہے ہیں، ہماری پیشیوں سے نظام عدل کی خامیاں سامنے آرہی ہیں اور سازش کے مہرے بھی ہر روز سامنے آرہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اہل اور نااہل کا فیصلہ عوامی عدالت نے کرنا ہے ،ْہم ہر عدالت جائیں گے لیکن پاکستان پر حکومت کا فیصلہ پاکستان کی عوام کی عدالت کرے گی اور ہم وہی فیصلہ مانیں گے، عوامی عدالت کے علاوہ ملک میں حکومت کس نے کرنی ہے، کسی نے امپائر بننے کی کوشش کی تو وہ امپائر ملکی استحکام کے خلاف انگلی اٹھائے گا۔
طلال چوہدری نے کہاکہ عمران خان اداروں پر کیچڑ اچھالتے ہیں، خفیہ اجنسی قومی ادارے ہیں، خفیہ ایجنسی کے سربراہ کہاں جاتے ہیں ،ْکہاں آتے ہیں یہ سب بتانے سے کل ہمارا دشمن بھی ہماری دوسری ایجنسیوں کے سربراہوں کا بتائے گا، کیا اس سے قومی مفاد متاثر نہیں ہوگا، اداروں اور ان کے سربراہان کو متنازعہ نہ بنایا جائے۔وزیر مملکت نے کہا کہ عمران نیازی کو پڑھانے والے انہیں اچھی چیز پڑھائیں ،ْجس چیز کا ٹیکہ انہیں لگایا جاتا ہے وہ اسی چیز کو بغیر سوچے سمجھے قے کردیتے ہیں، عمران خان بولنے سے پہلے دیکھیں وہ کیا بول رہے ہیں، خفیہ ادارے قومی اثاثہ ہیں، سب کی کوشش ہونی چاہیے ان کا تحفظ کیا جائے لیکن عمران خان جان بوجھ کر چند روز سے کسی کے کہنے پر یہ کام کررہے ہیں جو ملک کے لیے نقصان دہ ہے۔
انتخابی اصلاحات بل سے متعلق سوال پر انہوں نے کہا کہ ہم نے مشرف اور آمروں کے قانون کو ہٹانے کی جدوجہد کی، پی پی بھٹو کے بنائے قانون کو پسند نہیں کررہی اور آمر کے قانون کی ترمیم چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ نوازشریف کی ذات سے وابستہ کیا ہر معاملہ عدالت میں جائے گا عدالتوں کے کاندھوں پر کتنا سیاسی بوجھ ڈالیں گے، سیاسی معاملات عدالتوں کے کاندھوں پر رکھ کر حل نہ کریں، اس سے عدالتوں کے احترام میں فرق آئیگا ،ْ بہتر عدالت ہے عدالتیں بس انصاف کریں۔ملی مسلم لیگ کی رجسٹریشن سے متعلق طلال چوہدری نے کہاکہ اس حوالے سے وزارت داخلہ نے اداروں کی رپورٹ پر خط لکھا ہے، کالعدم جماعتوں کو نام بدل کر کام نہیں کرنے دیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں