اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ بھارت کے ساتھ پینگیں بڑھانے میں مصروف ہے، تفصیلات کے مطابق پاکستان کی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں کو فراموش کرتے ہوئے امریکہ بھارت کے ساتھ قربتیں بڑھا رہا ہے اور پاکستان کے ساتھ امریکہ کا رویہ مخاصمانہ ہوتا جا رہا ہے، جس کی وجہ سے چین اور روس کے بعد افغان طالبان بھی پاکستان کی حمایت میں اب بول پڑے ہیں۔ڈان ڈاٹ کام کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ افغان طالبان نے اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر پاکستان کو امریکہ کی طرف سے کسی بھی طرح کا خطرہ لاحق ہوا تو ہم پاکستان کا دفاع کریں گے۔ طالبان نے مزید کہا کہ ٹرمپ انتظامیہ نے پاکستان کے خلاف کسی بھی طرح کی جارحانہ کارروائی کی تو ہم امریکیوں کے خلاف لڑیں گے۔ یہاں یہ بات حیران کن ہے کہ افغان طالبان کی طرف سے یہ بیان امارات اسلامی افغانستان کی بجائے پاکستان کے مولانا سمیع الحق کے ذریعے دیا گیا ہے۔ اس بیان میں بتایاگیا کہ گزشتہ دنوں اتحاد علمائے افغانستان کا ایک اجلاس ہوا اس میں پاکستان کے خلاف جارحیت کرنے پر امریکہ کے خلاف لڑنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ اس اجلاس میں افغان طالبان کے علاوہ دیگر افغان مذہبی تنظیموں کے نمائندے بھی شریک ہوئے۔ اجلاس کی کارروائی کو تحریری صورت میں کرنے کے بعد انہوں نے اسے مولانا سمیع الحق کو بھجوا دیا، اس بیان میں طالبان اور دیگر مذہبی تنظیموں نے لکھا کہ امریکہ یا بھارت اگر پاکستان پر حملہ آور ہوتے ہیں تو ہم اسی طرح پاکستان کے لیے لڑیں گے جس طرح ہم اپنے ملک افغانستان کے لیے لڑ رہے ہیں۔ اس بیان میں طالبان نے پاکستان کی سیاسی اور مذہبی قیادت کو اپنے اختلافات بھلا کر ایک ہونے کی نصیحت کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں