اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)چین نے امریکی فائٹر جہاز ریپٹر’’ایف 22‘‘کے ہم پلہ اسٹیلتھ طیارے کا انجن بنا لیا، جے ایف 17تھنڈر طیارے کے بلاک تھری میں ٹیکنالوجی پاکستان منتقل ہونے کا امکان روشن، مغربی دفاعی ماہرین میں کھلبلی مچ گئی۔ تفصیلات کے مطابقچین نے اسٹیلتھ لڑاکا طیارے ’’جے 20‘‘کا آواز کی رفتار سے تیز مگر اسٹیلتھ رہنے والا انجن تیار کر لیا ہے جسے امریکی طیارے ریپٹر’’ایف 22میں نصب انجن کے ہم پلہ قرار دیا جا رہا ہے۔انجن کو چین میں حال ہی میں نمائش کیلئے پیش کر دیا گیا ہے۔چینی انجن ٹربوفین جیٹ انجن ہے جس کے بارے میں اندازہ لگایا گیا ہے کہ آفٹربرنر کے ساتھ اس کا تھرسٹ 14 تا 15 ٹن (31360 پونڈ سے 33600 پونڈ تک) ہوگا جس کی بدولت چین کا جے 20 لڑاکا طیارہ آواز سے زیادہ رفتار پر بہ آسانی پرواز کرسکے گا۔ساخت اور مبینہ خصوصیات کو دیکھ کر مغربی دفاعی ماہرین میں کھلبلی مچ گئی ہے کیونکہ چین نے پہلے ہی اعلان کر رکھا ہے کہ وہ آئندہ 20 سال میں اپنے لڑاکا طیاروں کو امریکی اور یورپی لڑاکا طیاروں سے بہتر یا پھر کم از کم ان کے ہم پلہ ضرور بنالے گااگرچہ جیٹ انجن کی چینی ٹیکنالوجی کی پاکستان کو منتقلی خارج از امکان قرار نہیں دی جاسکتی اور کہا جاسکتا ہے کہ اس کامیابی کا فائدہ پاک چین مشترکہ ’’جے ایف 17 تھنڈر‘‘ کو پہنچے گا جو بڑی تیزی سے اپنے ’’بلاک 3‘‘ کی جانب بڑھ رہا ہے تاہم اس میں کچھ وقت لگے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں