قاہرہ(آئی این پی )مصر میں ایک سنگ دل اور بدقسمت شخص نے بیوی کے اکسانے پر اپنی 81 سالہ بوڑھی ماں کو وحشیانہ تشدد کرکے قتل کردیا، سوشل میڈیا پر واقعے پر شدید رد عمل سامنے آیا ہے ، شہریوں نے ماں کے قاتل سے قصاص لینے کا مطالبہ کردیا،دوسری جانب ماں کے قاتل بیٹے کو پولیس نےگرفتار کرلیا جس کے خلاف عدالت میں مقدمہ کی کارروائی شروع کردی گئی ۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق اسکندریہ شہر کیرہائشی ایک شخص نے بیوی کے اکسانے پر اپنی 81 سالہ ماں زینب السید محفوظ وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا، جب وہ بے
ہوش ہوئی تو اسے گھر کے صحن میں پھینک دیا اور خود اپنی چہتی بیوی کے ہمراہ ڈنر کے لیے گھر سے نکل گیا۔تشدد کا شکار بوڑھی خاتون کے منہ سے نکلنے والا خون گھر کے دروازے سے باہر تک بہہ گیا۔ کسی ہمسائے نے خون دیکھا تو دروازہ کھٹکھٹا کر اندر آواز دی۔ مگر کوئی جواب نہ ملنے پر لوگ گھر کے اندر داخل ہوگئے جہاں انہیں بوڑھی خاتون خون میں لت پت ملی۔پڑوسیوں نے اپنی مدد آپ کے تحت خاتون کو اسپتال پہنچایا جہاں پہنچ کر وہ دم توڑ گئی۔ اہل محلہ پولیس کو اطلاع دی۔ جب بیٹے اور اس کی بیوی کو پتا چلا کہ پولیس انہیں ڈھونڈ رہی ہے تو وہ دونوں فرار ہوگئے مگر چوبیس گھنٹے کے اندر اندر پولیس نے دونوں کو دھرلیا۔ دورانبیٹے نے اعتراف کیا کہ اس نے اپنی ماں کو بیوی کے اکسانے پر تشدد کا نشانہ بنایا جو اس کے لیے جان لیوا ثابت ہوا۔ سوشل میڈیا پر اس واقعے نے شہریوں کو سخت جذباتی کیا ہے۔ شہریوں کی جانب سے ماں کے قاتل سفاک بیٹے کو اسی بے رحمی کے ساتھ تشدد کر کے موت کے گھاٹ اتارے جانے کامطالبہ کیا جا رہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں