اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان کی سرحد سے سکیورٹی اہلکاروں پر بم حملے کے بعد سرحد بند کر دی گئی، تفصیلات کے مطابق افغانستا ن کی سرحد سے سکیورٹی اہلکارو ں پر دو بم حملوں کے بعد پاک افغان سرحد طورخم بند کر دی گئی اور اس سے نیٹو سپلائی سمیت تجارتی سرگرمیاں مکمل طور پر معطل رہیں۔ سیکورٹی ذرائع کے مطابق طورخم سرحد کو تا حکم ثانی ہمیشہ کے لیے بند کرنے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز دھماکوں کے بعد طورخم سرحد بندکر دی گئی تھی، ان دونوں بم دھماکوں میں 7 سکیورٹی اہلکاروں سمیت 9 افراد زخمی ہو گئے تھے۔ذرائع نے بتایا کہ یہ دونوں دھماکے دستی بم کے تھے اور یہ دستی بم افغانستان کے علاقے سے سکیورٹی اہلکاروں پر پھینکے گئے۔ ان دستی بم دھماکوں کے بعد سکیورٹی فورسز نے پورے علاقے کو اپنے گھیرے میں لے لیا اور سرحد مکمل طور پر آمد رفت کے لیے بند کر دی گئی ۔ لنڈی کوتل آنے جانے والے راستوں پر بھی سکیورٹی اور چیکنگ سخت کر دی گئی ہے۔ یہاں یہ بات یاد رہے کہ افغانستان سے پاکستان میں دہشت گردی پاکستان کا ازلی دشمن بھارت کروا رہا ہے جس کے بارے میں ساری دنیا جانتی ہے۔ طورخم سرحد تا حکم ثانی بند رہے گی اور ہر قسم کی آمد و رفت معطل رہے گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں