ہنگو(این این آئی )سیاسی میدان سمیت ہر شعبہ زندگی میں خواتین کو استحصال کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔خیبر پختون خواہ میں تبدیلی کے نام پر عوامی حقوق کا مذاق اُ ڑیا جا رہا ہے ۔سی پیک منصوبے میں خیبر پختون خواہ کو بائی پاس کیا گیا ۔ان خیالات کا اظہار معروف اینکر پر سن ریحام خان نے دورہ ہنگو کے موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کر تے ہو ئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ احتساب وقت کی اہم ضرورت ہے اور بلا تفریق احتساب ہو نا چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ کے پی کے میں بےروز گاری مہنگائی ،جہا لت اور تمام سماجی مسائل صو بائی حکومت کے کنٹرول سے باہر ہو چکے ہیں اور کے پی کے حکمران جماعت پی ٹی آئی نام نہاد تبدیلی کے نعروں کی آڑ میں عوام کے بنیادی حقوق پا مال کر کے محض سیاسی دوکان چمکا رہی ہے۔ریحام نے کہا کہ میرٹ اور شفافیت کی بات کر نے اور انصاف کا ڈھنڈورا پھٹنے والے اپنے کر دار اور گفتگو پر غور کریں انہوں نے کہا کہ پاک چین راہداری منصوبے میں کے پی کے کو نظر انداز کر نا عوامی مفادات کے منافی ہے انہوں نے کہا کہ ملک کی تقدیر بدلنے کے لئے کروڑوں عوام کو نمائندوں کے انتخاب میں سو چ سمجھ کر فیصلہ کر نا ہو گا ایک سوال کے جواب میں ریحام خان کا کہنا تھا کی خیبر پختونخواہ سمیت فاٹا کے قبائلی علاقوں میں ریحام خان فاونڈیشن کے پلیٹ فارم سے بچوں کے حقوق پر کام جاری ہے جس سے مثبت نتائج سامنے آررہے ہیں انہوں نے کہا کہ خواتین کو سیاسی جماعتوں سمیت زندگی کے ہر شعبہ میں حراساں کر کے استحصال کا نشانہ بنایا جا رہا ہے ۔اور خواتین سے متعلق بنائے گئے قوانین اور تحفظ کی پالیسی پر کوئی عمل در آمد نہیں کیا جا تا کو کہ یقیناایک المیہ ہے ۔انہوں نے کہا کہ خواتین کی جنسی استحصال کیساتھ ساتھ خواتین کے ساتھ امتیازی سلوک اور حقوق کی پامالی کے باوجود ملک میں خواتین کی شکایات کے فوری ازالہ کے لئے کوئی الگ با اختیار حکومتی ادارہ موجود نہیں ۔انہوں نے کہا کہ خواتین کے لئے سیاسی میدان اور تمام شعبوں میں دانستہ رکاوٹوں کا سامنے کر نے پر مجبور کیا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ملک کے بنیادی مسائل کے حل اور چیلنجز سے نمٹنے کیلئے فر سودہ طرز سیاست تر ک کر کے پر طبقہ فکر کو سنجیدہ کر دار ادا کر نا ہو گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں