اسلام آباد(نیوزڈیسک) معروف ٹی وی اینکر اقرار الحسن نے ایک ویڈیو پیغام میں اپنے انتقال کی افواہوں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم کی دعائیں میرے ساتھ ہیں اور میں ٹھیک ہوں، انہوں نے اپنے بارے میں پھیلنے والے افواہوں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ انتہائی مشکل حالات ہیں قوم میرے لئے دعا کرے، انہوں نے کہا کہ ہم نے یہاں اب تک جتنا کام کیا ہے وہ بہت ہے انہوں نے کہا کہ یہاں کے حالات ٹھیک نہیںلوگوں کے گھر جلائے جارہے ہیں اور وہ بنگلہ دیش جانے پر مجبور ہیں واضح رہے کہ اس سے
قبل خبریں آرہی تھیں کہ اقرارالحسن روہنگیا مسلمانوں پر ہونے والے مظالم کو دنیا کے سامنے لانے کے لئے ان دنوں میانمار گئے ہوئے ہیں اور یہ بتایا جا رہا ہے کہ وہ جس علاقے میں موجود تھے وہاں حالات کافی کشیدہ ہیں اور مختلف ذرائع نے ان کی جاں بحق ہونے کی خبریں بھی دی ہیں۔ تاہم پاکستان میں ان کے خاندان والوں نے اس خبر پر کسی بھی قسم کا تبصرہ کرنے سے گریز کیا ہے۔ سوشل میڈیا پر ان کی بہادر شاہ ظفر کے مزار کے باہر لی گئی تصویر کافی شیئر ہورہی ہے۔ دوسری جانب اقرارالحسن کی ایک تصویر فیس بک پر شیئر ہوئی ہے جس کے ساتھ انہوں نے لکھا ہے کہ یہ میری زندگی کی سب سے مشکل ڈیوٹی ہے کیونکہ میں گزشتہ تین دن سے سو نہیں سکا اور حالت سفر میں ہوں۔ انہوں نے کہا ہے کہ قوم کی دعائیں میرے ساتھ ہیں اور میں ٹھیک ہوں، انہوں نے اپنے بارے میں پھیلنے والے افواہوں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ انتہائی مشکل حالات ہیں قوم میرے لئے دعا کرے اس موقع پر اقرارالحسن کے چاہنے والوں نے ان کے لئے نیک خواہشات کے ساتھ ان کی باحفاظت وطن واپسی کی دعا کی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں