اسلام آباد : نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے معروف صحافی حامد میر نے کہاکہ آصف زرداری اور نواز شریف کا ایک مشترکہ دوست ہے اور اس کا آصف زرداری کے ساتھ رابطہ تھا۔ آصف علی زرداری اس کو بھی نہیں مل رہے نہ اس کے فون کا جواب دے رہے ہیں۔ آصف زرداری نے تمام لوگوں کو ہدایت کر دی ہے کہ نواز شریف یا کسی قریبی دوست کا فون سننا بند کردو۔
جب میں نے ان سے وجہ دریافت کی تو انہوں نے مجھے کہا کہ اگر میں نے نواز شریف سے ملاقات کی یا اس سے ٹیلی فون پر بات کی تو میڈیا اس بات کا بتنگڑ بنا دے گا ۔ اگر میں نے آئندہ عام انتخابات سے قبل نواز شریف کے ساتھ ملاقات یا اصولی اور غیر اصولی کسی بھی قسم کا تعاون بھی کیا تو ملک کے جمہوری نظام کو بہت نقصان پہنچے گا۔ حامد میر نے کہا کہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی نے ایک وقت میں ساتھ مل کر ملک کے جمہوری نظام کو مضبوط کرنے کی کوشش کی تھی اور اب ان کا یہ خیال ہے کہ نواز شریف سے رابطے میں ملک کی جمہوریت کی بساط لپیٹی جا سکتی ہے۔
انہوں نے اپنے تمام قریبی لوگوں کو بھی ہدایت کر دی ہے کہ نواز شریف اور ن لیگ سے دور دور رہو تو بہتر ہے۔ اس معاملے میں اب نوا ز شریف کو خیال کرنا چاہئیے کہ انہوں نے اپنے امیج کو کہاں پہنچا دیا ہے جبکہ نواز شریف کے سپورٹر ابھی تک یہی سمجھتے ہیں کہ نواز شریف کے ساتھ زیادتی ہوئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں