اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)آئی ایس آئی کے سابق آفیسر اور دفاعی ماہر میجر(ر) محمد عامرنجی ٹی وی چینل کے پروگرام ” جرگہ“ میں گفتگو کرتے ہوئےکہا ہے کہ ضیا ءالحق افغانستان کے ساتھ مخلص تھے انہوں نے افغانیوں اور پاکستانیوں کے درمیان محبت کو فروغ دیا تھا۔آج بھی افغانستان کے لوگ ضیا ءالحق کو یاد کرتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستانی سفیر افغانستان کے ایک گاؤں ” ایبک“ گئے۔ ایبک گاؤں قطب الدین ایبک کا گاؤں ہے، وہاں جب انہوں نے بتایا کہ میں پاکستان کا سفیر ہوں تو دیہاتیوں نے ان کے لئے دنبہ ذبح کر لیا اور ان کی بھرپور مہمان نواز کی، انہوں نے جب وہاں کے لوگوں سے پوچھا کہ میں آپ کے لئے کیا کرسکتا ہوں تو ایک بوڑھا گھر اندر گیا اور پاکستان کا جھنڈا اور ضیاءالحق کی تصویر اٹھا کر لیا اور کہا کہ یہ دونوںپرانے ہوچکے ہیں ہمارے لئے یہ بدل دیں ، میں نے کہاکہ جھنڈا تو میں بدل دوں گا مگر دوسری تصویر بدلنا میرے بس میں نہیں ہے۔ افغانستان کے باسی آج بھی جنرل ضیاءالحق کی محبتوں کو یاد کرکے اس دور کو یاد کرتے ہیں۔وہ افغانستان کے ساتھ مخلص تھے ، جب افغانستان میں جہاد ختم ہوا تو اس کے دوران ہی انہیں مار دیا گیا جس کے بعد پاکستان میں آنے والے سربراہوں نے بہت بڑی غلطیاں کی جس کا خمیازہ قوم کو بھگتنا پڑا اور آج تک بھگت رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں