اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سینئر سیاستدان جاوید ہاشمی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دھرنے کے دوران عمران خان نے کہا تھا کہ جج خودنواز شریف کو ہٹا دینگے اور پارلیمنٹ تحلیل کردینگے، میں نے عمران خان سے کہا یہ غیر آئینی بات ہے، میرے لئےوہ آدمی قابل احترام نہیں جو آئین کو پاؤں تلے روندتا ہو۔ عارف علوی،شیریں مزاری اور شفقت محمود نے مجھے آکر کہا کہ عمران خان پارلیمنٹ پر حملہ کرنے کیلئے تیار بیٹھا ہے، عمران خان نے کہا کہ تصدق جیلانی کے بعد جو جج آ رہا ہے وہ پارلیمنٹ توڑ دے گا اور نوازشریف مستعفی ہو جائیں گے ، ہمارا کوئی مقابلہ نہیں کر سکے گااورانتخابات کے بعد ہماری حکومت بن جائے گی دھرنے کے دوران عمران خان عدلیہ کے ججوں کا نام لیتے رہے،انہوں نے کہا کہ مشرف بھگوڑا اور بزدل ہے میں نے آج تک کبھی عہدے اور اقتدار کی دعا نہیں کی اور نہ ہی تحریک انصاف کی پارٹی کو ختم کرنے آیا ہوں،شیخ رشید نے کنٹینر کے اوپر چڑھ کر کہا کہ میز کے نیچے چھپ جاؤ، انہوں نے کہا کہ میں آج قوم کے سامنے حلفیہ بیان کر رہا ہوں، انہوں نے کہا کہ لانگ مارنگ جب گوجرانوالہ پہنچا تو کچھ لوگوں نے پتھراؤ کیا۔‎جاوید ہاشمی کا کہنا تھا کہ عمران خان اور ان کی جماعت نے بعد میں مجھے پر سنگین ترین الزامات عائد کئے، ان الزامات کے جواب میں ، میں عمران خان کو یہی کہوں گا کہ تم پر خدا کا قہر نازل ہو۔

اپنا تبصرہ بھیجیں