اسلام آباد(آن لائن)برطانیہ میں رقوم کی منتقلی پر سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے صاحبزادوں سمیت شریف خاندان کیخلاف لندن میں بھی تحقیقات شروع ہونے کے امکانات روشن ہو گئے ۔ذرائع کے مطابق نوازشریف کے صاحبزادوں کی طرف سے پاکستان میں کروڑوں روپے تحائف کی شکل میں بھیجنے اور انہی کمپنیوں کے اکاؤنٹس خسارے میں ظاہر کرنے پر برطانیہ کا ادارہ ایچ ایم ریونیو جے آئی ٹی رپورٹ پر ریفرنس دائر ہونے کے بعد تحقیقات کا آغاز کرسکتا ہےجس سے کئی دہائیوں سے لندن میں مقیم شریف فیملی کی مشکلات میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ذرائع کے مطابق جے آئی ٹی کی ہدایت کی روشنی میں برطانیہ کی معروف فرانزک فرم کے اور اہم حکومتی ادارے کے درمیان باہمی قانونی معاونت کے بعد جے آئی ٹی پابند ہے کہ وہ پاکستان کے اندر ہونیوالی تحقیقات’’آؤٹ کم‘‘ سے آگاہ کرے گی ۔ ذرائع نے بتایا کہ نوازشریف کے بیٹوں نے پاکستان بھاری رقوم تحائف کی مد میں قانونی طریقے سے منتقل کی تاہم برطانیہ کے ایچ ایم ریونیو کی اس پہلو میں دلچسپی ہے کہ جن کمپنیوں سے رقوم پاکستان ، سعودی عرب دبئی اور قطر منتقل ہوئیں ان کو خسارے میں ظاہر کیا گیا یا منافع حاصل کرکے ٹیکس ادا کیا گیا ۔ واضح رہے کہ برطانیہ میں گزشتہ سال قانون پاس ہوا جس کے مطابق اگر ثابت ہوا کہ برطانیہ میں بے نامی کمپنی نے ناجائز دولت سے پراپرٹی خریدی تو پھر ایسی پراپرٹی بحق سرکار ضبط ہو گی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں