اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)ویسے تودنیا کی سب سے بڑی ٹیکنالوجی کمپنی گوگل میں ملازمت حاصل کرنا ہر کسی کا خواب ہے خاص طورپر ہر نوجوان کا تاہم ایک نوجوان ایسا بھی ہے جس نے یہ نوکری چھور کرسموسے بیچنا شروع کردیئے۔ مناف کپاڈیا نامی نےگوگل جیسی بڑی کمپنی میں فل ٹائم ملازمت چھوڑ کر اپنی ماں کیساتھ انکے کچن میں ہاتھ بٹانا شروع کردیاہے تاہم اب اس نوجوان کے بزنس کا سالانہ ٹرن اوور75ہزار ڈالر ہے۔ نوجوان لڑکے نے2014 میں اپنی والدہ کو مصروف رکھنے کے لیے’’دی بوہری کچن‘‘ کا آغاز کیا تھا جس کا آئیڈیا ان کی ماں نے

دیا تھا۔ تاہم دوسال کے اندر اندر یہ کچن کامیاب ہوگیا اور ممبئی کےاچھے ریسٹورینٹس میں سب سے بڑا برانڈ بن گیا۔ اپنے کاروبار کو پھلتا پھولتا دیکھ کر مناف نے گوگل میں ملازمت چھوڑ دی اور اپنی ماں کا ہاتھ بٹانے لگا۔ابتدائی طورپر یہ ریسٹورنٹ صرف 20لوگوں تک کو کھانا فراہم کرتا تھا تاہم اب وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بوہڑی کچن ایک دن میں 30سےزائد ڈلیوریز کرتاہے۔ تاہم اب اس کے بڑھتے ہوئے کاروبار کو دیکھتے ہوئے نوجوان مناف کپاڈیا کا ارادہ ہے کہ وہ مستقبل میں اپنے کاروبار کو دوسرے شہروں میں بھی شروع کرے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں