اسلام آباد(آن لائن)پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین سابق صدرآصف علی زدراری نے کہاہے کہ وزیراعظم نوازشریف پہلے استعفیٰ دے دیتے تواتنی جگ ہنسائی نہ ہوتی ،وزیراعظم سازش کی بات کرکے اشارہ عدالت کی طرف کررہے ہیں ،جب تک نوازشریف پرکوئی چارج فریم نہیں ہوتاوہ سوال کرتے رہیں گے کہ ان پرالزام کیاہے؟،ہمیں پانامہ کیس کے فیصلے کاانتظارکرناچاہئے ،فیصلے سے قبل میں کچھ اسٹیٹمنٹ نہیں دوں گا،حکمران ڈیلیورنہیں کرسکے ،پاکستان پیپلزپارٹی ہی دوبارہ حکومت میں آکرڈیلیورکریگی ۔نجی ٹی وی کوانٹرویودیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کاہروقت احتساب ہوا،ڈاکٹرعاصم باہرجانے کی درخواست کررہے ہیں نوازشریف پہلے استعفیٰ دے دیتے توان کی جگ ہنسائی

نہ ہوتی ،لواری ٹنل کاکام بھٹوصاحب نے شروع کروایا،میاں نوازشریف کے خلاف کوئی سازش نہیں ہورہی سازش کی بات کرکے وہ اشارہ عدالتوں کی طرف کررہے ہیں ۔جب تک نوازشریف پرجارج فریم نہیں ہوتاجب تک نوازشریف کہیں گے کہ ان پرالزام کیاہے ،نوازشریف توخودکومظلوم ہی ثابت کریں گے ۔انہوں نے کہاکہ شریف خاندان کی حرکتیں نہ مجھے سمجھ آئی ہیں نہ پسندآتی ہیں ،ان کی حرکتوں سے دوسرے سیاستدان بھی بدنام ہوتے ہیں ،وفاقی وزراء اپناکام چھوڑکرنوازشریف کوبچانے میں لگے ہیں ۔نوازشریف کے خلاف فیصلہ آیاتوانہیں جاناہی ہوگا۔انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کی نااہلی نظرآرہی ہے ،وزیرخزانہ کوپیسے دینے والاہمارابھی دوست ہے ،میرانہیں خیال کہ اسے متنازعہ بناناچاہئے ،شیخ ہمارااورپاکستان کاحامی اوردوست ہے ،کل ہم نے رہناہے یانہیں دوسرے ممالک کے ساتھ تعلقات پاکستان کے ساتھ رہیں گے ۔حکمرانوں کواس بات کاخیال کرناچاہئے ۔انہوں نے کہاکہ قطری شہزادے نے کہاکہ ان کے دادانے مجھے بتایاتھاکہ میاں شریف نے انویسٹمنٹ کی ہے ،قطری خط میں بھی کافی مسائل ہیں ۔اسحاق ڈارکے پاس دوآپشنزہیں ہمیں فیصلے کاانتظارکرناچاہئے کچھ کہناقبل ازوقت ہوگا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں