جنیوا(مانیٹرنگ ڈیسک) سوئٹزرلینڈ میں 75 برسوں سے لاپتہ ایک جوڑے کی حنوط شدہ لاشیں مل گئیں۔ایلپس کے پہاڑی سلسلے میں سوئٹزرلینڈ کے ایک گلیشیئر سے ملنے والی دو حنوط شدہ لاشوں کی حتمی شناخت ہوگئی ، یہ لاشیں مقامی شادی شدہ جوڑے 40 سالہ مارسیلیں دُومُولیں اور اس کی 37 سالہ بیوی فرانسین کی ہیں، جو تین چوتھائی صدی قبل اچانک لاپتہ ہو گیا تھا۔ان دونوں افراد کی لاشیں قریب سانفلوئے رون نامی گلیشیئر کے علاقے میں سطح سمندر سے 8,580 فٹ کی بلندی سے ملی ہیں،اس جوڑے نے ایسے لباس پہن رکھے تھے، جو دوسری عالمی جنگ کےکی بلندی سے ملی ہیں،اس جوڑے نے ایسے لباس پہن رکھے تھے، جو دوسری عالمی جنگ کے دور میں استعمال کیے جاتے تھے، اس کے علاوہ ان لاشوں کے قریب سے ایک بیک پیک، ایک گھڑی، ایک بوتل اور ایک کتاب بھی ملی۔‘‘سوئس پولیس کے مطابق آج سے 75 برس قبل 15 اگست 1942ء کے روز یہ سوئس جوڑا اس وقت اچانک لاپتہ ہو گیا تھا، جب وہ اپنے گھر سے پہاڑی علاقے میں قائم ایک باڑے میں رکھے گئے اپنے جانوروں کو چارہ ڈالنے کے لیے نکلا تھا جبکہ اسی علاقے میں ایک اسکیئنگ ایریا کی انتظامیہ کے ملازمین بھی تھے۔والیس کی پولیس کے مطابق شاید یہ جوڑا ساڑھے سات عشرے قبل کسی پہاڑی حادثے کا شکار ہو کر ہلاک ہوگیا تھا، یہ لاشیں اس وقت ملی تھیں، جب اسکیئنگ گراؤنڈ کے ملازمین علاقے کے اسکیئنگ کے لیے محفوظ ہونے کا جائزہ لے رہے تھے۔علاقائی پولیس کا کہنا ہے کہ ہمارے پاس 1925ء سے لے کر اب تک لاپتہ ہو جانے والے ایسے کئی مقامی اور غیر مقامی افراد کے ناموں کی فہرست موجود ہے، جو اچانک غائب ہوگئے تھے۔خیال رہے کہ ایلپس کے پہاڑی علاقے میں اچانک کسی بڑے برفانی تودے کے گرنے یا گلیشیئر کے ٹوٹ جانے سے تحفظ کے لیے ایسے معائنے اسکیئنگ کے ہر سیزن میں کیے جاتے ہیں اور اور جب موسمیاتی تبدیلیوں کے باعث گلیشیئر پگھلنے لگتے ہیں تو لاپتہ افراد کی لاشیں بھی ملنا شروع ہو جاتی ہیں، جو اکثر کئی دہائیاں گزر جانے کے باوجود انتہائی کم درجہ حرارت کی وجہ سے گلی سڑی ہوئی بھی نہیں ہوتیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں