اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)کوئٹہ میں دوران ڈیوٹی ایم پی اے کی گاڑی سے کچلے جانے کے باعث شہید ہونیوالے پولیس اہلکار کے اہلخانہ نے نامعلوم افراد کے بجائے مقدمے کا اندراج رکن صوبائی اسمبلی مجید اچکزئی کے خلاف کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے شہید پولیس اہلکار عطااللہ کے اہلخانہ کا کہنا تھا کہ ہم نہ ملزم کومعاف کرینگے اور نہ ہی دیت لیں گے۔شہید عطا اللہ کی بیٹی کا کہنا تھا کہ میرے والد کو قتل کیا گیا ہے اور قاتل کو معاف نہیں کرینگے جبکہ بیٹے معظم نے الزام لگایا ہے کہ
ADVERTISEMENT
Ad
ایم پی اے مجید اچکزئی نشے کی حالت میں گاڑی چلا رہا تھا ۔ واضح رہے کہ شہید عطا اللہ نے پسماندگان میںایک بیوہ سمیت 3بیٹے اور 2بیٹیاں چھوڑی ہیں جبکہ اس کے ضعیف والدین بھی بقید حیات ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں