برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) جرمنی کی چانسلر انجیلا مرکل نےکہاہے کہ جرمنی جلد اسلامی ریاست میں بدل جائے گا اورہمارے ملک میں مساجدکی تعدادگرجاگھروں سے زیادہ ہوجائے گی ۔جرمن چانسلرانجیلامرکل نے ایک جرمن جریدے کوانٹرویودیتے ہوئے کہاکہ جرمنی جلداسلامی ریاست میں بدل جائے گا۔انہوں نے کہاکہ جرمنی مسلمان پناہ گزینوں کی آمد کو روکنے کے سلسلے میں ناکام رہا ہے جسکی وجہ سے انکا ملک جرمنیجلد اسلامی ریاست بن جائے گا اور یہاں گرجا گھروں کی تعداد کم ہو جائیگی اور مساجدزیادہ ہوں گی ۔انجیلامرکل نے کہاہےکہ پناہ گزینوں کی آمد کو روکنے کے حوالے سے ہم ناکامی کا شکار رہے ہیں اور
ADVERTISEMENT

پچھلے چار سالوں سے اس حوالے سے ہم اپنے آپکو دھوکہ دیتے چلے آرہے ہیں انکا مذید کہنا تھا کہ ان حالات میں مساجد پہلے سے زیادہ نمایاں ہو جائیں گی اور گرجا گھر کم ہوتے چلے جائیں گے دوسری طرف اعداد وشمار کے مطابق فرانس میں اس وقت بیس سال سے کم عمر کے تیس فیصد بچے مسلمان ہیں جبکہ پیرس اور دیگر علاقوں میں یہ تناسب 45فیصد ہے جنوبی فرانس میں مساجد کی تعداد گرجاگھروں سے زیادہ ہے برطانیہ میں بھی یہ تناسب زیادہ مختلف نہیں ہے گذشتہ تیس سالوں کے دوران برطانیہ میں مسلمانوں کی آبادی 82ہزار سے 25 لاکھ تک پہنچ گئی ہے اور برطانیہ میں ایک ہزار مساجد ہیں ان میں سے بہت سی مساجد گرجا گھروں سے تبدیل کی گئی ہیں اسی طرح بیلجیم نے 50فیصد نوزائیدہ بچوں کی تعداد مسلمان ہے جبکہ روس میں پانچ میں سے ایک شخص مسلمان ہے واضح رہے کہ لیبیا کے سابق صدر معمر القذافی نے کہا تھا کہ مغر ب کسی جنگ وجدل کے بغیر اسلام کا قلعہ بن جائے گا اس کے لئے کسی خود کش بمبار یا ہتھا ر کی ضرورت نہیں پڑے گی اوراب جرمن چانسلرنے بھی ان کے موقف کی تصدیق کردی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں