>پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک )خیبر پختونخوا حکومت کی طرف سے پشاور کے سرکاری ہسپتالوں میں دوسری شفٹ شروع کرنے کے فیصلے کے بعد مریضوں نے پرائیویٹ ڈاکٹروں کے پاس جانا چھوڑ دیا جس سے شہر کے بہت سے بڑے بڑے ڈاکٹروں کا کاروبار بری طرح متاثر ہو کر رہ گیا ہے ۔ایک قومی اخبار کے مطابق پشاور کے 3سرکاری ہسپتالوں کے او پی ڈی میں دوسری شفٹ شروع ہونے کے بعد مریضوں نے پرائیویٹ کلینکس پر جانا بند کر دیا ،حکومت نے سرکاری ہسپتالوں میں علاج نہ

صر ف سستا اور معیاری کر دیا ہے کہ بلکہ دیگر سہولتوں میں بھی اضافہ کیا ہے جس سے شہری مطمئن ہیں۔ ان ہسپتالوں میں لیڈی ریڈنگ ہسپتال ، خیبر ٹیچنگ ہسپتال اور حیات آباد میڈیکل کمپلیکس شامل ہیں۔ڈھیری گاؤں کے ڈاکٹر نے اس سلسلے میں بتایا کہ خیبر ٹیچنگ ہسپتال کی او پی ڈی میں دوسری شفٹ شرو ع ہونے کی وجہ سے نجی ڈاکٹروں کے پاس مریضوں کے آنے سلسلہ بہت حد تک کم ہو ا ہے ۔”مریض اس ہسپتال میں جاتے ہیں جہاں وہ 10روپے کی سلپ پر اپنا علاج کرا سکیں “

اپنا تبصرہ بھیجیں