اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)معروف ایٹمی سائنسدان ڈاکٹرعبدالقدیرخان نے کہاہے کہ پاکستان کے ایٹمی پروگرام کاسہراسابق وزیراعظم ذوالفقارعلی بھٹوکوجاتاہے جنہوں نے دنیابھرسے دشمنی لے کرایٹمی پروگرام شروع کیااورمجھ جیسے نوجوان پربھروسہ کیا۔ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹرعبدالقدیرخان نے کہاکہ ملک کےمیں بہت کچھ کرسکتاتھالیکن حکمرانوں نے روک کرمجھے ایسانہیں کرنے دیا۔انہوں نے انکشاف کیاکہ

پاکستان نے ایٹم بم پر 1974 میں اور میزائل ٹیکنالوجی پر کام بینظیر بھٹو کے دور میں شروع کیا گیاتھا اور کم وسائل کے باوجود پاکستان کو ایٹمی اور میزائل قوت بنایا۔ڈاکٹرعبدالقدیرخان نے کہاکہ سابق صدر ضیاء الحق اور اس کے بعد سابق صدر غلام اسحاق خان کومیںنے کو تحریری طور پر بتایا کہ ایک ہفتے کے نوٹس پرہم ایٹمی بم کاتجربہ کر سکتے ہیں جس کاثبوت یہ ہے کہ جب بھارت نے ایٹمی دھماکے کئے تو ہم نے حساب برابرکردیا۔قومی سائنسدان نے کہاکہ میں نے ملک میں سستی آٹوموبائل کی انڈسٹری کی پیشکش بھی کی تھی جس سے پاکستان کواربوں ڈالرزرمبادلہ ملتالیکن حکمرانوں نے ایساکرنے سے روک دیا۔انہوں نے کہاکہ جب حکمران کوئی کام نہ کرنے دیں توایک آدمی کیاکرسکتاہے ۔انہوں نے کہاکہ پرویزمشرف نے غیرملکی طاقتوں کے ایماپرمجھے ہٹایااورمجھ پرالزامات لگائے ۔اس موقع پرانہوں نے واضح کیاکہ آج بھی میری گزراوقات ہالینڈمیں کی گئی نوکری سے بچت پرہوتی ہے اوراس حوالے سے میرے پاس ثبوت کے طورپر رسیدیں بھی موجود ہیں ۔ ڈاکٹرعبدالقدیرخان پرویزمشرف نے غیرملکی طاقتوں کے ایماپرمجھے ہٹایااورمجھ پرالزامات لگائے ۔اس موقع پرانہوں نے واضح کیاکہ آج بھی میری گزراوقات ہالینڈمیں کی گئی نوکری سے بچت پرہوتی ہے اوراس حوالے سے میرے پاس ثبوت کے طورپر رسیدیں بھی موجود ہیں جومیں کسی بھی وقت پیش کرسکتاہوں

اپنا تبصرہ بھیجیں