>دبئی (آئی این پی ) ایک ٹیم کے ساتھ کپ جیتا اور دوسری کی باری ہے،میں جانتا ہوں کہ میں جہاں بھی جاؤں گا وہ میرے ساتھ ہوں گے،پشاورزلمی کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے ذاتی وجوہات کے باعث پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کی فرنچائز پشاورزلمی کی صدارت اور کھلاڑی کی حیثیت سے علیحدگی کا اعلان کردیا ۔ پشاورزلمی کے سابق کپتان شاہد آفریدی نے ٹویٹر میں اپنے پیغام میں ٹیم سے علیحدگی کا اعلان کرتے ہوئے کہا

کہ ‘ایک ٹیم کے ساتھ کپ جیتا اور دوسری کی باری ہے اور میں ذاتی وجوہات کے باعث پشاورزلمی کے لیے بطور صدر اور کھلاڑی کی خدمات کے خاتمے کا اعلان کررہا ہوں ۔ شاہد آفریدی نے ٹیم کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پشاورزلمی کے ساتھ میری نیک خواہشات ہیں اور جہاں تک پشاور کے میرے مداحوں کا تعلق ہے تو میں جانتا ہوں کہ میں جہاں بھی جاؤں گا وہ میرے ساتھ ہوں گے۔شاہد آفریدی نے پی ایس ایل 2017 کے ڈرافٹنگ کے عمل میں کپتانی سے علیحدگی اختیار کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کے سابق کپتان ڈیرن سیمی کو کپتانی دینے کا اعلان کیا تھا۔شاہد آفریدی نے ڈیرن سیمی اور مارلن سیمیولز، ڈیوڈ ملان اور کرس جارڈن کو پی ایس ایل کے فائنل کے لیے لاہور آنے کے لیے آمادہ کرنے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔قذافی اسٹیڈیم لاہور میں کھیلے گئے پی ایس ایل 2017 کے فائنل میں انجری کے باعث شاہد آفریدی ٹیم کا حصہ نہیں تھے تاہم پلے آف اور راؤنڈ میچوں میں انھوں نے ٹیم کی فتوحات میں اہم کردار ادا کیا تھا۔کراچی کنگز کے خلاف دوسرے پلے آف کے دوران ہاتھ پر گیند لگنے سے شاہد آفریدی کے ہاتھ میں 12 ٹانکے آئے تھے جس کے بعد وہ فائنل سے دست بردار ہوئے تھے۔شاہد آفریدی اس وقت دبئی میں موجود ہیں جہاں انھوں نے ایمریٹس ٹی ٹوئٹی ٹورنامنٹ میں پشاورزلمی کی ٹیم کی حمایت کی جبکہ میچ کے دوران کمنٹری بھی کی۔پی ایس ایل کے دوران ہی شاہد آفریدی نے بین الاقوامی کرکٹ سے کنارہ کشی کا بھی انکشاف کردیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں