کراچی (این این آئی) پاکستان میں صومالیہ کی سفیر خدیجہ محمد المخوزمی نے کہا ہے کہ قحط سالی کے سبب سومالیہ میں غذائی اجناس سمیت دواؤں کی اشد ضرورت ہے،مصیبت کی اس گھڑی میں پاکستانی بھائی ہماری مدد کریں،سومالیہ میں امداد لیکر جانے والوں کو بھرپور سیکیورٹی فراہم کی جائے گی،وہ جمعہ کو سیلانی ویلفئیر ٹرسٹ کے ہیڈ آفس کے دورے کے موقع پر اعزازی قونصل جنرل سیف الرحمان کے ہمراہ اظہار خیال

کررہی تھیں،سیلانی مرکز آمد پر سیلانی ٹرسٹ کے جوائنٹ سیکریٹری عامر مدنی ،ٹرسٹی عارف لاکھانی ،غلام نورانی ،عبدالصمد ،نوید رزاق ودیگر نے سفیر اور ان کے ہمراہ آنے والوں کا خیرمقدم کیا ،ایک سوال پر سومالی سفیر نے کہا کہ سومالیہ میں امن وامان کی صورتحال پہلے کے مقابلے میں بہتر ہے،مغربی ممالک کی جانب سے پروپیگنڈا پھیلا یا جاتا ہے کہ وہاں امن وامان کی صورتحال خراب ہے ویسے تو پوری دنیا میں سو فیصد کہیں بھی امن نہیں ہے ،ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ سومالیہ کی آبادی ڈیڑھ کڑور نفوش پر مشتمل ہے جن میں کچھ علاقے متاثر ہیں ،اگر 3 ماہ تک بارش سے متاثرہ علاقوں میں کھانے پینے کی اشیاء نہ ملیں تو آپ سوچ سکتے ہیں کہ وہاں کیا صورتحال ہوگی،انہوں نے کہا کہ ہمارے ملک کو 4 غذائی اجناس آٹا ،چاول ،چینی اور کھانے کے تیل کی زیادہ ضرورت ہے ،انہوں نے کہا کہ اگر سیلانی ٹرسٹ میڈیکل ٹیم سومالیہ بھیجنا چاہے تو ہم سرکاری سطح پر اس کو پوری سیکیورٹی فراہم کریں گے اور میں خود جاکر ان کے ہمراہ امداد پہنچاؤں گی،اس موقع پر اعزازی قونصل جنرل سیف الرحمن نے کہا کہ اقوام متحدہ کے سروے کے مطابق اگر سومایہ کے متاثرہ علاقوں میں آئندہ 3 ماہ میں خوراک نہ پہنچائی گئی تو 10 لاکھ لوگ لقمہ اجل بن جائیں گے،انہوں نے کہا کہ وہ حکومت پاکستان سے بھی درخواست کریں گے کہ سومالیہ کے متاثرہ لوگوں کو زیادہ سے زیادہ امداد

پہنچائی جائے،اس موقع پر عامر مدنی نے کہا کہ فی الحال غذائی اجناس اور دواؤں سے لیس ایک کنٹینر روانہ کررہے ہیں اور مستقبل میں جتنی ضرورت ہوگی امداد روانہ کی جائے گی،اس سلسلے میں ہمارے رضا کار میڈیکل ٹیم کے ساتھ سومالیہ کا دورہ کریں گے،اس موقع پر ٹرسٹی غلام نورانی نے سومالی سفیر اور ان کے وفد کا سیلانی مرکز آنے پر شکریہ ادا رتے ہوئے یقین دہانی کرائی کہ ان کا ادارہ پاکستانی بھائیوں کے ساتھ ملکر سومالی عوام کی ہر ممکن مد د کریں گے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں