اسلام آباد (آئی این پی ) ملک بھر میں سال 2016کے دوران مجموعی طور پر 14ہزار 212 انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے واقعات رپورٹ ہوئے۔پنجاب میں 7313،سندھ میں 2817،بلوچستان میں612،خیبرپختونخوا میں 3247 اور وفاق میں 223واقعات رونما ہوئے۔صرف پنجاب اور سندھ میں ریپ کے 3390،غیرت کے نام پر قتل کے 322 ،خواتین کے اغواء کے1680،تیزاب گردی اور جلانے کے 56، بچوں کے اغواء اور انکے

جنسی طور پر حراساں کرنے کے 125 اور قتل کے 882واقعات رپورٹ ہوے۔دستاویزات کے مطابق گزشتہ سال 2016میں پنجاب میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے 7ہزار313واقعات رپورٹ ہوئے،جن میں قتل کے 688،مارپیٹ کے 539 واقعات شامل ہیں۔دستاویزات کے مطابق 2016میں پنجاب میں غیرت کے نام پر 222افراد کو قتل کیا گیا جبکہ تیزاب گردی اور جلانے کے 49اور ونی کیے جانے کے 7 واقعات رونما ہوئے۔دستاویزات کے مطابق پنجاب میں 2938ریپ کے،گینگ ریپ کے 222 واقعات رپورٹ ہوئے جبکہ دیگر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے 2423واقعات رونما ہوئے۔دستاویزات کے مطابق سندھ میں2016کے دوران غیرت کے نام پر 100،اغوا کے 369،خواتین کے اغوا کے 1680،قتل کے 194،مارپیٹ کے 59،زبردستی شادی کے 6،کم عمر میں شادی کے 2،تیزاب گردی اور جلانے کے 7،ریپ کے 165،گینگ ریپ کے 13،نوکری کے دوران دفاتر میں ہراساں کرنے کے 26،بچوں کے اغوا کے 94،بچوں سے زیادتی کے 53،بچوں کو جنسی ہراساں کرنے کے 31 واقعات رپورٹ ہوئے جبکہ سندھ میں مجموعی طور پر 2829واقعات رونما ہوئے،ملک بھر میں سال 2016کے دوران مجموعی طور پر 14ہزار 212 انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے واقعات رپورٹ ہوئے۔پنجاب میں 7313،سندھ میں 2817،بلوچستان میں612،خیبرپختونخوا میں 3247 اور وفاق میں 223واقعات رونما ہوئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں