نئی دہلی(این این آئی) دیوبند سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے نومنتخب رکن اسمبلی برجیش سنگھ نے کہا ہے کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ ریاست میں آنے والی نئی حکومت شہر کا نام تبدیل کرکے دیوورند کردے۔بھارتی اخبارکی رپورٹ کے مطابق برجیش سنگھ نے بتایا کہ شہر دیوبند کو اسلامی مدرسے دارالعلوم دیوبند کے نام کے بجائے مہابھارت سے اس کے تاریخی تعلق کی مناسبت سے دیوورند پکارا جانا چاہئے۔لکھنؤ

میں بھارتی اخبار سے فون پر گفتگو کرتے ہوئے برجیش سنگھ نے کہاکہ ریاست میں حکومت کے قیام کے بعد اسمبلی میں شہر کی تاریخی اہمیت کو دوبارہ واپس لانے کے لیے نام کی تبدیلی کا مطالبہ سب سے پہلا ہوگا۔برجیش سنگھ نے بتایا کہ دیوبند اور مہابھارت کی تاریخی اہمیت کو واضح کیا جانا ضروری ہے اور دیوبند کو صرف اس لیے دیوبند کہنا کیونکہ یہاں دارالعلوم دیوبند موجود ہے بہت غیرمنصفانہ ہے۔انہوں نے رنکھنڈی ٗجاکھ والا اور جرودا پانڈا نامی دیہاتوں سے ملنے والی متعدد تاریخی اشیاء اور مہابھارت کے درمیان تعلق کی اہمیت پر زور دیا۔برجیش سنگھ کے مطابق وہ دارالعلوم دیوبند کے خلاف نہیں، یہ مدرسہ قدیم سنسکرت اسکولوں جیسا ہے تاہم اس وقت شہر صرف ایک اسلامی مدرسے کی نمائندگی کررہا ہے جبکہ تاریخی طور پر دیوورند اس سے کہیں زیادہ اہمیت کا حامل ہے، لہذا وہ چاہتے ہیں کہ شہر کو اس کی شناخت واپس ملےرنکھنڈی ٗجاکھ والا اور جرودا پانڈا نامی دیہاتوں سے ملنے والی متعدد تاریخی اشیاء اور مہابھارت کے درمیان تعلق کی اہمیت پر زور دیا۔برجیش سنگھ کے مطابق وہ دارالعلوم دیوبند کے خلاف نہیں، یہ مدرسہ قدیم سنسکرت اسکولوں جیسا ہے تاہم اس وقت شہر صرف ایک اسلامی مدرسے کی نمائندگی کررہا ہے جبکہ تاریخی طور پر دیوورند اس سے کہیں زیادہ اہمیت کا حامل ہے،۔دیوبند کے نام کو تبدیل کرکے دیوورند کرنے کے اقدام پر مسلمانوں میں شدید اشتعال پھیل گیا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں